داعش مالی مسائل کا شکار کیوں ہوئی؟

قلب الاسد افغانی

داعش نے افغانستان میں جتنے بھی حملے کیے، وہ امریکہ کی مالی امداد  اور اس کے تعاون سے کیے۔ امریکہ نے بھی انہیں اتنے فنڈز اس لیے دیے کیونکہ انہوں نے ہمیشہ بچوں سمیت دینی علماء اور عام شہریوں کو شہید کیا۔ لیکن جب افغانستان میں امارت اسلامیہ قائم ہوئی، اور اس نے داعش کی فتنے کو ختم کر دیا، تو امریکہ بھی سمجھ گیا کہ اب اس کی یہ سازش کام نہیں آنے والی اور اس نے داعش کو دیے جانے والے فنڈز کم کر دیے اور شاید جلد مکمل طور پر بند کر دے۔

اب داعش اس قدر کمزور ہو چکی ہے کہ  اسے اپنی بقاء کے لیے چندہ کرنا پڑ رہا ہے اور العزائم کی جانب سے کچھ عرصہ قبل چندے کا اعلان بھی کیا گیا۔

لیکن ہم ان سے پوچھنا چاہتے ہیں کہ اگر واقعی میں تم شروع سے امریکی آلہ کار نہیں تھے تو پھر پہلے چندہ کیوں نہیں کرتے تھے؟

کیا تمہارے لیے اس سے قبل آسمان سے اسلحہ اور دیگر جنگی وسائل اترتے تھے؟ یا پہلے خود پیسے کماتے تھے اور پھر اسے جنگ میں استعمال کرتے تھے؟ یا اپنے آبا و اجداد کی میراث کے ذریعے جنگ کر رہے تھے؟

لیکن نہیں، ایسا ہرگز نہیں ہے۔ بلکہ تمہارے لیے امریکہ نے ان جنگوں کے لیے فنڈ مقرر کر رکھا تھا، لیکن جب امارت اسلامیہ کی جانباز افواج کے ہاتھوں اللہ تعالیٰ کی مدد و نصرت سے تمام منصوبے ناکام ہو گئے، تو تم امریکہ کے مقروض بھی ہو گئے اور اس نے جتنے فنڈز تمہیں دیے اس پر اس کو پچھتاوا بھی ہوا۔ باقی ان شاء اللہ اب تمہارے زوال کا وقت ہے اور اب  تم ذلت کے ساتھ نہ صرف اس ملک سے بلکہ پوری دنیا سے ختم ہونے والے ہو۔