سیاہ خلافت کے تکفیری خوارج گھٹنوں کے بل

#image_title

سیاہ خلافت کے تکفیری خوارج گھٹنوں کے بل

عبدالرحیم (ترين)

پچھلے چند مہینوں میں بغدادی تکفیری خلافت کے کارندوں کو ہر طرف سیاہ دن کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، ان میں سے جو بھی سر اٹھاتا ہے اسے کاٹ دیا جاتا ہے، یا پھر پابندِ سلاسل کیا جاتا ہے، ان کے مقاصد اور اہداف افشاء اور ناکام بنا دیے جاتے ہیں،

 

ان کے باداراں کے چہروں سے پرده ہٹایا جا رہا ہے اور انٹیلی جنس فورسز ان کے قتلِ افغان منصوبوں کو ایک ایک کر کے ناکام بنا دیتے ہیں۔

 

یہ اسلامی امارت کے ساتھ اللہ تعالیٰ کی نصرت اور اس عظیم قوم کی عظیم قربانیوں کا نتیجہ ہے کہ شب و روز انٹیلی جنس مجاہدین اس تکفیری گروہ کے ہر شیطانی منصوبے کا انکشاف کر رہے ہیں اور عوام کو اس اسلام دشمن شر سے نجات دلاتے ہیں۔

انٹیلی جنس مجاہدین کی کارروائیاں اس قدر دلچسپ ہیں کہ انہوں نے چند ماہ قبل ملک سے باہر ان باغیوں کے جڑوں کا انکشاف کیا اور پتہ لگایا کہ کس کے کمان میں، کس کے لیے اور کن مقاصد کے حصول کے لیے وہ افغانستان کے عوام پر حملے کر رہے ہیں۔ اور فائدہ کس کو ہو رہا ہے ؟

 

المرصاد ادارے کی طرف سے اس انکشاف کے بعد المرصاد نے پرسوں کل پھر صوبہ بدخشاں میں داعش کے بارہ افراد کے زندہ پکڑے جانے کی اطلاع دی ، اس خبر سے ایسا معلوم ہوتا ہے کہ مذکورہ تکفیری ،انٹیلی جنس گروپ اور منصوبہ تباہی کے دہانے پر ہے اور اپنے اندرونی اختلافات اور گھبراہٹ کا شکار ہے۔ حتی کہ وہ اپنے آپ کو چھپانے کے قابل نہیں رہے حملہ کرنا تو دور کی بات ہے۔ اور مزید یہ کہ فعال اور انتہائی

دلچسپ انٹیلیجنس مجاہدین پل در پل ان کے خاتمے کے درپے ہیں۔

 

اس خبر سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ اس گروہ کے بعض ارکان اسلامی امارت کی انٹیلی جنس مجاہدین کے ساتھ تعاون کر رہے ہیں، انہیں پتہ چلا ہے کہ وہ غلط ہیں اور ان کے جھوٹے حملوں کو روکنے کے خاطر( جو افغان شہریوں اور مذہبی علماء کو نشانہ بناتے ہیں،) وہ اسلامی امارت کے انٹیلی جنس مجاہدین کے ساتھ تعاون کرتے ہیں اور ایسے واقعات کو روکتے ہیں۔

 

 

بغدادی تکفیری گروہ کی حالت اور طاقت زوال کے دہانے پر ہے اور وہ وقت دور نہیں کہ یہ سرزمین ہمیشہ کے لئے ان سے پاک اور تین سلطنتوں کے قبرستان بننے کے بعد داعش خوارج کا بھی قبرستان بن جائے گا۔

ان شاء اللہ