خوارج کے کرتوت ہر زمانے میں

#image_title

خوارج کے کرتوت ہر زمانے میں

عابد احمدزئی

صدیاں گزر گئیں، زمانے بدل گئے، بہت سے لوگ ملیا میٹ ہوگئے، لیکن تاریخ کے نقوش اب تک تازہ ہونے کے ساتھ ساتھ تمام حقائق سے وقتاً فوقتاً پردہ اٹھاتے ہوئے آرہے ہیں۔
خوارج نے ہر زمانے میں ہمارے علماء پر وحشیانہ اور بزدلانہ حملے کئے ہیں، علماء سمیت ہمارے پاک صحابہ پیارے محبوب(ﷺ) کے چمن کے پھولوں اور اسلامی خلافت کے امیروں تک کو شہید کرتے آئے ہیں۔

ان کی شہادتوں اور خوارج کے ان سیاہ کرتوتوں کے سینکڑوں بلکہ ہزاروں سال گزر گئے، لیکن تاریخ کے ایسے صفحات ہیں جو ہمیں وہی روزمرہ واقعات کی طرح دکھاتے ہیں۔
لہذا جب خوارج کے اعمال (کرتوت) بدلنے والے نہیں، تو اسی لئے موجودہ صدی میں بھی علماء کو شہید کرنے کیلئے انہوں نے اپنی نجس تلوار نیام سے نکالی ہوئی ہیں، اور وقتاً فوقتاً ہمارے علماء کو شہید کر رہے ہیں، جن کی فہرست میں سے پچھلے سال افغانستان کے قلب (کابل) میں بھی ایک بزدلانہ حملہ کیا، اور اس حملے میں ہمارے بزرگ عالم، فخر المسلمین، عالم دین اور خوارج کی قلع قمع کرنے والی شخصیت کو نشانہ بنایا اور اسے ہزاروں طالب علموں کی پہلو سے اللہ تعالی کی دیدار کو واصل کیا۔
اللہ ان کی شہادت کو اپنے دربار میں قبول فرمائے ، ورثاء کو صبر جمیل اور قاتلوں کو ان تمام سیاہ کرتوتوں کی سزا عطا فرمائے۔