افغانستان میں امریکی حملہ کیا لے کر آیا؟

#image_title

افغانستان میں امریکی حملہ کیا لے کر آیا؟

طاہر احرار

 

یہ بہانہ بنا کر کہ امارت اسلامیہ افغانستان نے اسامہ بن لادن کو امریکہ کے حوالے کیوں نہیں کیا، ۷ اکتوبر کو افغانستان میں خون ریز حملے شروع ہوئے۔ جارحیت پسندوں نے افغانستان پر حملہ کیا، ایک مستحکم جمہوری نظام اور تعمیرِ نو کا نعرہ پیش کیا اور اس مقصد کے لیے اپنے تربیت یافتہ غلام بھی لے کر آئے!

امریکہ نے آج تک کوئی ایک ثبوت بھی فراہم نہیں کیا کہ گیارہ ستمبر کے حملوں کا حکم اسامہ بن لادن نے دیا تھا۔ اگر امریکہ کو یقین ہوتا تو اسامہ بن لادن کو نشانہ بنانا اس کے لیے کوئی مشکل کام نہیں تھا۔ لیکن حقیقت میں امریکہ افغانستان میں ایک اسلامی نظام سے خوفزدہ تھا۔

اس نظام کو گرانے کی خاطر ہزاروں مسلمان مرد، عورتیں اور بچے شہید اور اتنی ہی تعداد معذور کر دیے گئے، ان کے گھر تباہ کر دیے گئے اور اتنے ہی مزید لوگوں کو سالوں تک کے لیے جیل کی وحشتوں میں ڈال دیا گیا۔

ایک مستحکم نظام کا وعدہ کر کے ایک نااہل نظام قائم کیا گیا، ایک ایسا نظام کہ جس نے ظلم و بربریت کی انتہا کر دی، چوری اور لوٹ مار میں عالمی سطح پر شہرت حاصل کی، اخلاقی فساد ایسا لایا کہ قلم اسے لکھنے سے عاجز ہیں، اقتدار اور اختیار کس قسم کا تھا اس کی داستانیں خود انہیں سے سنی جا سکتی ہیں۔ اس نظام کو واشنگٹن کی حفاظت کی ذمہ داری دی گئی، کچھ سالوں تک لوگوں کی آنکھوں میں دھول جھونکتے رہے اور نمونے کے طور پر کچھ سڑکیں تعمیر کر دیں، بے پناہ ڈالر لے کر آئے لیکن پھر واپس بھی لے گئے، بدلے میں ہم سے ہمارا اسلام چھین لیا، فحاشی، لواطت اور زنا کو عام کیا گیا اور ہماری نئی نسل کو تباہی و بربادی کے راستے پر ڈال دیا۔

سکیورٹی صورتحال ایسی برباد ہوئی کہ عوام کی حفاظت کرنا تو در کنار یہ خود اپنی حفاظت نہ کر سکے، خود کو چار دیواریوں کے پیچھے بند کر لیا اور اندر ہی مورچے بنا کر بیٹھ گئے۔ اس سے امریکیوں کو سمجھ آگئی کہ اس کا سارے ایشیا کو فتح کرنے کا خواب جھوٹا تھا، اس لیے اس نے وہاں سے نکلنے کا سوچنا شروع کر دیا۔

لیکن اس نے جانے سے پہلے ایک متبادل آزمایا اور داعش کو افغانستان منتقل کر دیا اور اسے بے پناہ ڈالر اور ہتھیار فراہم کیے۔ لیکن ایک عقیدے کو دوسرے سے لڑانے کی اس پالیسی کو بھی مات دے دی گئی۔ انہیں اتنی سمجھ نہیں تھی کہ داعش کا بکاؤ یہودی نظریہ اسلامی نظریے کا مقابلہ کیسے کر سکتا ہے؟

اس قوم کی بے مثال قربانیوں کے نتیجے میں آقا، غلام، اتحادی، سب اللہ تعالیٰ کی مدد و نصرت سے ذلیل و رسوا ہوئے۔

وللہ الحمد