استنبول حملہ آوروں میں سے ایک تاجکستانی شہری ہے

#image_title

استنبول حملہ آوروں میں سے ایک تاجکستان کا شہری ہے۔

اتوار کو ترکی کے شہر استنبول میں چرچ پر حملے میں ایک شخص ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔
ترکی کے وزیر داخلہ نے حال ہی میں کہا تھا کہ دو افراد نے حملہ کیا اور دونوں کو زندہ پکڑ لیا گیا۔ ترکی کے وزیر داخلہ کے مطابق حملہ آوروں میں سے ایک تاجکستان کا شہری ہے اور دوسرا روس کا شہری ہے۔
داعش خوارجیوں نے ترکی کے صوبے میں حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس حملے میں ایک شخص ہلاک اور دوسرا زخمی ہوا ہے۔
حملے کے بعد ترک سیکیورٹی فورسز نے مختلف صوبوں میں تیز رفتار کارروائیاں کیں اور اب تک خوارج سے وابستہ 47 افراد کو گرفتار کرنے کا اعلان کیا ہے۔
ترکی میں تازہ ترین حملے میں تاجک داعش کے ملوث ہونے کا معاملہ ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب حال ہی میں افغانستان، خطے اور دنیا میں داعش خوارج کی جانب سے تاجک شہریوں کا استعمال اپنے عروج پر پہنچ چکا ہے۔